Sunday, October 25, 2009

Women; An Object of Sin !!!! Oh Mullah


One of the LUMS students Malia wrote a poem in protest against “Moral Policing Mentality” in Pakistan.

ملا نے سکھایا اک سیانی کو سبق
کسی زن کے قریب آے نہ کوئی نر
ہے اک یہ ہی رب کا امر
اسی پر تو بس کرنا فکر
اسی پر دین ہے قائم
اسی سے ہے روسّں قبر
اسی سے بنیں قومیں امر
کسی زن کے قریب آے نہ کوئی نر
ہے فرنگی کا مکر Freewill
دخل ذاتیات ہے رب کا امر
بازارمیں بہن کو جوتے لگا کر سوچتا پسر
سوات کا واقعہ ہے قوموں کا فخر
لگائیں زنا بالجبر پراندھی بچی کو کوڑے اگر
تو پھر بھی نہ کرے کوئی فکر
کہ عقل کا استعمال ہے گناہ کبر
یہ قیمتی ہے صرف تو اسے نہ کر
بس ھاتھ میں تو اپنے اب پکڑ
اک موٹا سا ڈنڈا ذر
ااور جا بجا گھنٹی ہر اک کہ گھر
کھل کہ تانک جھانک تو کیا کر
کہ کسی زن کے قریب آے نہ کوئی نر
ہے یہ ہی اک میرے رب کا امر
جو تیرا ہمسایہ گیا بھوک سی مر
کیوں تجھے ھوتی ہے فکر
گر گیا راہ پر جو کسی کا پدر
تو کیوں کر کرے کوئی فکر
بیاہ دے قرآن سے بیٹی اگر
نہ تو پھر بھی کوئی کرے ذکر
چھین لیا کسی نے کسی کا در
بس پھر بھی نہ تو ہو مضطر
یہ سب معاملات کہ تو ہو غافل ذر
اکہ آ سکے زن کہ قریب یہ مردود نر
جھوٹ چوری رشوت سب پر تو کرنا صبر
بس کسی ناری کہ قریب ایے نہ نر
کہ اسی سے بنی قومیں امر
سائنس کی کبھی نہ تو کرنا فکر
معاشیات پر بھی نہ کرنا نظر
اور فنون لطیفہ ہے کیا مکر
کس نے کہا ہے کہ یہ ہے کوئی ہنر
اورانسانیت میں ہے نہیں کوئی ثمر
جب آ گیا ناری کہ قریب کوئی نر

3 comments:

Shahryar said...

wonderful poem.. It's a pity that LUMS is turning into a madrassah now. I hope has long expelled that idiot girl!!

A bug's life said...

Very nicely written

Anonymous said...

Great Job.

Keep LUMS a seat for Business Management not Mullah Umar Doctrine.